Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

اِفطار کروانے کی عظیم الشّان فضیلت

اِفطار کروانے کی عظیم الشّان فضیلت

حضرتِ سَیِّدُنا سَلْمان فارسی رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے رِوایَت ہے کہ حُضورِ انور ، شافِعِ مَحشر ،مدینے کے تاجور ،باِذنِ ربِّ اکبر غیبوں سے باخبر محبوبِ داوَر عزوجل و صلَّی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہٖ وسلَّم کا فرمانِ رُوح پرور ہے :”جس نے حَلال کھانے یا پانی سے(کسی مُسلمان کو)روزہ اِفْطَار کروایا،فِرِشتے ماہِ رَمَضان کے اَوْقات میں اُس کے لئے اِسْتِغفَار کرتے ہیں اور جبرِیل (عَلَیْہِ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام) شبِ قَدْرمیں اُس کیلئے اِسْتِغفَار کرتے ہیں ۔ ‘ ‘          (طبرانی المعجم الکبیر ج۶ ص۲ ۶ ۲حدیث۶۱۶۲ )
     سُبحٰنَ اللہ! سُبحٰنَ اللہ عَزَّوَجَلَّ!  قُربان جائیے اللہ رَبُّ الْعِزَّت عَزَّوَجَلَّ کی عنایت و رَحمت پر کہ کوئی مسلمان ماہِ رَمَضان میں اگر کسی روزہ دار کو ایک آدھ کَھجورکھِلا کر یا پانی کا ایک گُھونٹ پِلا کر روزہ اِفْطَار کروادے تَو اُس کے لئے اللہ عَزَّوَجَلّ َکے
مَعصُوم فِرِشتے رَمَضانُ الْمُبارَک کے اَوقات میں اور فِرِشتوں کے سردار حضرتِ سَیِدُّنا جِبرِیل علیہ السلام شبِ قدْر میں دُعائے مَغْفِرت فرماتے ہیں۔ اَلْحَمْدُلِلّٰہِ عَلٰی اِحسَانِہٖ ؕ
error: Content is protected !!