ایک سنی حنفی بالغ لڑکی کا نکاح زبردستی ایک جبری وہابی کے ساتھ کیا گیا

سوال:ایک سنی حنفی بالغ لڑکی کا نکاح زبردستی ایک جبری وہابی کے ساتھ کیا گیامگروہ لڑکی اب تک خاوند کے پاس نہیں گئی ۔ کیا اس لڑکی کو طلاق حاصل کرنا چاہیے۔؟
Advertisement

(عمرخان حسن خان پٹھان سرسی)

جواب: کسی بالغہ سنی مسلمان لڑکی کوکسی بدمذہب سے جس کی بدعت کفرتک پہنچ گئی تو نکاح کرناقطعاًجائز ہی نہیں ،یہ نکاح ہوا ہی نہیں پھرطلاق کیسا؟ لہٰذا دوسرے سنی مسلمان سے نکاح کرسکتی ہے 
Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: Content is protected !!