Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

کیا عورت بذاتِ خود کورٹ سے طلاق لے سکتی ہے ؟

 سوال نمبر ۴:-کیا عورت بذاتِ خود کورٹ سے طلاق لے سکتی ہے ؟

جواب :-طلاق کااختیار شریعت نے مرد کو دیا ہے ۔اس کے علاوہ کوئی دوسرا طلاق نہیں دے سکتا ۔ آیت مبارکہ ہے الَّذِیۡ بِیَدِہٖ عُقْدَۃُ النِّکَاحِ ؕ ”ترجمہ کنزالایمان :وہ جس کے ہاتھ میں نکاح کی گرہ ہے ”(البقرۃ۲۳۷)              اور حدیث مبارک ہے الطَّلاَقُ لِمَنْ اَخَذَ بِالسَّاقِ ”طلاق کا مالک وہی ہے جوعورت سے جماع کرے” ۔لہذا اگر کورٹ نے شوہر کے طلاق دیئے بغیر یک طرفہ عورت کے حق میں فیصلہ کرکے طلاق دیدی تو اُسے طلاق نہ ہوگی اور اس عورت کا دوسرا جگہ نکاح کرنا حرام و زنا ہے ۔

error: Content is protected !!