خوف کیاہے؟

خوف کیاہے؟

    حضرت محبوب سبحانی،قطب ربانی شیخ عبدالقادرجیلانی رحمۃاللہ تعالیٰ علیہ سے خوف کے متعلق دریافت کیاگیاتوآپ رحمۃاللہ تعالیٰ علیہ نے فرمایا کہ”اس کی بہت سی قسمیں ہیں(۱)خوف۔۔۔۔۔۔یہ گنہگاروں کو ہوتا ہے(۲)رہبہ۔۔۔۔۔۔یہ عابدین کو ہوتا ہے (۳)خشیت۔۔۔۔۔۔یہ علماء کو ہوتی ہے۔”نیزارشادفرمایا:” گنہگار کاخوف عذاب سے، عابد کا خوف عبادت کے ثواب کے ضائع ہونے سے اورعالم کاخوف طاعات میں شرک خفی سے ہوتاہے ۔”
Advertisement
    پھرآپ رحمۃاللہ تعالیٰ علیہ نے فرمایا:”عاشقین کا خوف ملاقات کے فوت ہونے سے ہے اورعارفین کا خوف ہیبت و تعظیم سے ہے اور یہ خوف سب سے بڑھ کر ہے کیوں کہ یہ کبھی دور نہیں ہوتا اور ان تمام اقسام کے حاملین جب رحمت و لطف کے مقابل ہو
جائیں تو تسکین پاجاتے ہیں۔”(المرجع السابق)
    دعاء والتجاء:اے اللہ عزوجل ہمیں حضورسیدناغوث اعظم رحمۃاللہ تعالیٰ علیہ کے ملفوظات شریف کوسمجھنے اور اس پر عمل کرنے کی توفیق عطافرمااورہمارے دلوں میں غوث پاک رحمۃاللہ تعالیٰ علیہ کی محبت کومزیدپختہ فرمادے۔
آمِیْنَ بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْنِ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہٖ وَآلِہٖ وَسَلَّمَ
قادری کرقادری رکھ قادریوں میں اٹھا
قدرِعبدالقادرقدرت نماکے واسطے
Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: Content is protected !!