حکایت

حکایت

حضرتِ سَیِّدُنا عُبَیْد ابنِ عِمران رضی اللہ تعالیٰ عنہُ فرماتے ہیں، ” میں ایک رات بُحَیْرَہ قُلْزُم(قُلزُم نامی سمندر) کے کَنارے پر تھا اور اُسی کھاری پانی سے وُضُو کرنے لگا۔ جب میں نے وہ
Advertisement
پانی چکّھا تَو شَہد سے بھی زیادہ میٹھا معلُوم ہوا ۔ مجھے بے حد تَعَجُّب ہوا۔میں نے جب حضرتِ سَیِّدُنا عُثمانِ غَنی رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے اِس بات کا ذِکْر کیا تو اُنہوں نے فرمایا:”اے عُبَیْد!رضی اللہ تعالیٰ عنہ وہ لَیْلَۃُالْقَدْر ہو گی ۔ ” مزید فرمایا:”جس شخص نے یہ رات اللہ عَزَّوَجَلَّ کی یاد میں گُزاری اُس نے گویا ہزار ماہ سے بھی زیادہ عَرصہ عِبادت کی اور اللہ تعالیٰ اُس کے تمام گُناہوں کو مُعاف فرمادے گا۔ ”(تذکِرۃُ الوا عِظین ص۶۲۶) اللہ عَزَّوَجَلَّ کی اُن پر رَحمت ہو اور ان کے صَدقے ہماری مغفِرت ہو۔
Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: Content is protected !!