اَذان   کے احکام ومسائل مع طریقہ

 

ا لْاَذَانُ     :   اَذان

 

(1):    اَذان کی تعریف

لغوی معنی:  اِعلان کرنا۔

شرعی معنی:  مخصوص اَلفاظ کے ساتھ نماز کے وقت داخل ہونے کے وقت اِعلان کرنا ۔

(2):    اَذان کا حکم   ۔۔۔۔ ہر نماز کے وقت مردوں کے لئے اَذان کہنا سنتِ مؤکدہ ہے۔

(3):    اَذان کے اَلفاظ

اَللّٰہُ اَکْبَرُ۔اَللّٰہُ اَکْبَرُ ۔۔۔۔۔۔ اَللّٰہُ اَکْبَرُ۔ اَللّٰہُ اَکْبَرُ

اَشْہَدُ اَنْ لَّآ اِلٰہَ اِلَّا اللّٰہُ ۔۔۔۔۔۔ اَشْہَدُ اَنْ لَّآ اِلٰہَ اِلَّا اللّٰہُ

اَشْہَدُ اَنَّ مُحَمَّدًا رَّسُوْلُ اللّٰہِ ۔۔۔۔۔۔ اَشْہَدُ اَنَّ مُحَمَّدًا رَّسُوْلُ اللّٰہِ

حَیَّ عَلَی الصَّلٰوۃِ ۔۔۔۔۔۔۔ حَیَّ عَلَی الصَّلٰوۃِ

حَیَّ عَلَی الْفَلَاحِ ۔۔۔۔۔۔۔ حَیَّ عَلَی الْفَلَاحِ

اَللّٰہُ اَکْبَرُ۔ اَللّٰہُ اَکْبَرُ ۔۔۔۔۔۔۔ لَآ اِلٰہَ اِلَّا اللّٰہُ

مسئلہ :   فجر کی اَذان میں [حَیَّ عَلَی الْفَلَاحِ ]کے بعد [ اَلصَّلٰوۃُ خَیْرٌ مِّنَ النَّوْمِ] کے اَلفاظ بھی دومرتبہ ادا کرے۔

(4):    اِقامت کا طریقہ

اِقامت اَذان کی طرح ہی ہے، اَلبتہ[حَیَّ عَلَی الْفَلَاحِ ] کے بعد دو مرتبہ[ قَدْ قَامَتِ
الصَّلٰوۃُ ]کہے۔
(5): اَذان کی شرائط
(۱): نماز کا وقت شروع ہو چکا ہو ۔
(۲): عربی زبان میں ہو۔
(۳): مؤذن عاقل(سمجھدار) ہو۔
(6): اَذان کی سنتیں
(۱): کھڑے ہو کر اَذان دے اور آواز بلند رکھے۔
(۲): پاک ہو اور قبلہ رو ہو۔
(۳): اَذان کے دوران کوئی گفتگو نہ کرے۔
(۴): مؤذن کی اَذان کا جواب دینا سنت ہے۔
(۵): اَذان میں[ حَیَّ عَلَی الصَّلٰوۃِ ]کے وقت دائیں طرف اور [ حَیَّ عَلَی الْفَلَاحِ ] کے وقت بائیں طرف چہرہ پھیرے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *