Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

تقویٰ اور ایمان پر خاتمے کا حکم

تقویٰ اور ایمان پر خاتمے کا حکم

یٰۤاَیُّهَا الَّذِیْنَ اٰمَنُوا اتَّقُوا اللّٰهَ حَقَّ تُقٰتِهٖ وَ لَا تَمُوْتُنَّ اِلَّا وَ اَنْتُمْ مُّسْلِمُوْنَ(۱۰۲)
ترجمۂ کنزُالعِرفان : اے ایمان والو! اللہ سے ڈرو جیسا اس سے ڈرنے کا حق ہے اور ضرور تمہیں موت صرف اسلام کی حالت میں آئے ۔
(اٰل عمران : ۱۰۲)
( اِتَّقُوا اللّٰهَ : اللہ سے ڈرو ۔ ) ارشاد فرمایا کہ اللہ عَزَّوَجَلَّ سے ایسا ڈرو جیسا ڈرنے کا حق ہے ۔ اس سے مراد یہ ہے کہ بَقدرِ طاقت اللہ تعالیٰ سے ڈرو ۔ اس کی تفسیر وہ آیت ہے جس میں فرمایا گیا :
فَاتَّقُوا اللّٰهَ مَا اسْتَطَعْتُمْ (تغابن : ۱۶) ترجمۂ کنزُالعِرفان : تو اللہ سے ڈرو جتنی طاقت رکھتے ہو ۔
نیز آیت کے آخری حصے میں فرمایا کہ اسلام پر ہی تمہیں موت آئے ۔ اس سے مراد یہ ہے کہ اپنی طرف سے زندگی کے ہر لمحے میں اسلام پر ہی رہنے کی کوشش کرو تاکہ جب تمہیں موت آئے تو حالت ِ اسلام پرہی آئے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: Content is protected !!