Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

قرآن شریف کے آداب

قرآن شریف کے آداب

مسئلہ۳۷: قرآن شریف زور سے پڑھنا افضل ہے جب کہ کسی نمازی یا بیمار یا سونے والے کو تکلیف نہ پہنچے۔
مسئلہ۳۸: دیواریں اور محرابوں پر قرآنِ مجید لکھنا اچھا نہیں ۔
مسئلہ۳۹: قرآن شریف پڑھ کر بھلا دینا گناہ ہے، قیامت کے دن اَندھا کوڑھی ہو کر اُٹھے گا۔
مسئلہ۴۰: قرآنِ مجید کی طرف پیٹھ نہ کی جائے، نہ پاؤں پھیلایا جائے نہ پاؤں اس سے اونچا کریں ،نہ یہ کرے کہ خود اُونچی جگہ پر ہو اور قرآن شریف نیچے ہو۔
مسئلہ۴۱: قرآن شریف کے اُوپر کوئی کتاب نہ رکھی جائے اگرچہ فقہ و حدیث کی ہو۔
مسئلہ۴۲: قرآن شریف پرانا بوسیدہ ہوگیا کہ پڑھنے کے قابل نہ رہا تو کسی پاک کپڑے میں لپیٹ کر اِحتیاط کی جگہ دفن کردیا جائے اور دفن کرنے میں اس کے لیے لحد بنائی جائے تاکہ اس پر مٹی نہ پڑے۔

مسئلہ۴۳: پرانے قرآن شریف کو جو پڑھنے کے قابل نہ رہا، جلایا نہ جائے بلکہ دفن کیا جائے۔
مسئلہ۴۴: قرآنِ مجید جس صندوق میں ہو اُس پر کپڑا وغیرہ نہ رکھا جائے۔
مسئلہ۴۵: کسی نے محض خیر و برکت کے لیے قرآنِ مجید اپنے گھر میں رکھ چھوڑا اور تلاوت نہیں کرتا تو گناہ نہیں بلکہ اس کی یہ نیت باعث ثواب ہے۔ (قاضی خان)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: Content is protected !!