غوث اعظم رحمۃاللہ تعالیٰ علیہ کی ولادت کی بشارتیں

غوث اعظم رحمۃاللہ تعالیٰ علیہ کی ولادت کی بشارتیں

(۱)سرکارمدینہ صلی اللہ علیہ وسلم کی بشارت:

Advertisement
    محبوبِ سبحانی شیخ عبدالقادر جیلانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کے  والد ماجد حضرت ابو صالح سید موسیٰ جنگی دوست رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ نے حضور غوث اعظم رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کی ولادت کی رات مشاہدہ فرمایا کہ سرور کائنات، فخر موجودات، منبع کمالات ،باعث تخلیق کائنات، احمد مجتبےٰ، محمد مصطفےٰصلی للہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم بمع صحابہ کرام آئمۃالہدیٰ اور اولیاء عظام رضی اللہ تعالیٰ عنہم اجمعین اِن کے گھر جلوہ افروز ہیں اوران الفاظ مبارکہ سے ان کو خطاب فرماکر بشارت سے نوازا: ”یَااَبَاصَالِح اَعْطَاکَ اللہُ اِبْنًاوَھُوَوَلِیٌّ وَمَحْبُوْبِیْ وَمَحْبُوْبُ اللہِ تَعَالٰی وَسَیَکُوْنُ لَہٗ شَانٌ فِی الْاَوْلِیَآءِ وَالْاَقْطَابِ کَشَانِیْ بَیْنَ الْاَنْبِیَاءِ وَالرُّسُلِ یعنی اے ابو صالح !اللہ عزوجل نے تم کو ایسا فرزند عطا فرمایا ہے جو ولی ہے اوروہ میرا اور اللہ عزوجل کا محبوب ہے اور اس کی اولیاء اور اَقطاب میں ویسی شان ہوگی جیسی انبیاء اور مرسلین علیہم السلام میں میری شان ہے۔”
(سیرت غوث الثقلین،ص۵۵بحوالہ تفریح الخاطر)
غوث اعظم رحمۃاللہ تعالیٰ علیہ درمیان اولیاء
چوں محمدصلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم درمیان انبیاء

(۲)انبیاء کرام علیہم السلام کی بشارتیں:

    حضرت ابو صالح موسیٰ جنگی دوست رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کو خواب میں شہنشاہ عرب و عجم ،سرکار دو عالم، محمد مصطفےٰصلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم کے علاوہ جملہ انبیاء کرام علیہم الصلوٰۃ والسلام نے یہ بشارت دی کہ” تمام اولیاء اللہ تمہارے فرزند ارجمند کے مطیع ہوں گے اور ان کی
گردنوں پر ان کا قدم مبارک ہوگا۔”(سیرت غوث الثقلین،ص۵۵بحوالہ تفریح الخاطر)
جس کی منبر بنی گردن اولیاء 
اس قدم کی کرامت پہ لاکھوں سلام

(۳)حضرت حسن بصری رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کی بشارت :

    جن مشائخ نے حضرت سیدناغوث اعظم رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کی قطبیت کے مرتبہ کی گواہی دی ہے” روضۃ النواظر” اور” نزہۃ الخواطر”میں صاحب ِکتاب ان مشائخ کاتذکرہ کرتے ہوئے لکھتے ہیں:” آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ سے پہلے اللہ عزوجل کے اولیاء میں سے کوئی بھی آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کا منکر نہ تھا بلکہ انہوں نے آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کی آمد کی بشارت دی،چنانچہ حضرت سیدناحسن بصری رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ نے اپنے زمانہ مبارک سے لے کر حضرت شیخ محی الدین سید عبدالقادر جیلانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کے زمانہ مبارک تک تفصیل سے خبردی کہ جتنے بھی اللہ عزوجل کے اولیاء گزرے ہیں سب نے شیخ عبدالقادرجیلانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کی خبر دی ہے۔(سیرت غوث الثقلین،ص۵۸)

(۴)حضرت جنید بغدادی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کی بشارت:

    آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ ارشاد فرماتے ہیں کہ” مجھے عالم غیب سے معلوم ہوا ہے کہ پانچویں صدی کے وسط میں سید المرسلین صلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم کی اولادِاطہار میں سے ایک قطبِ عالم ہوگا، جن کا لقب محی الدین اور اسم مبارک سید عبدالقادررحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ ہے اور وہ غوث اعظم ہوگا اورجیلان میں پیدائش ہوگی ان کو خاتم النبیین،رحمۃٌ للعالمین صلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم کی اولادِ اطہار میں سے ائمہ کرام اور صحابہ کرام علیہم الرضوان کے علاوہ اولین و
آخرین کے ”ہر ولی اور ولیہ کی گردن پر میرا قدم ہے۔” کہنے کا حکم ہوگا۔”
( سیرت غوث الثقلین، ص ۵۷)

(۵)شیخ ابوبکرعلیہ الرحمۃکی بشارت :

    شیخ ابوبکربن ہوارارحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ نے ایک روزاپنے مریدین سے فرمایا کہ ”عنقریب عراق میں ایک عجمی شخص جو کہ اللہ عزوجل اور لوگوں کے نزدیک عالی مرتبت ہوگا اُس کا نام عبدالقادررحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ ہوگااور بغداد شریف میں سکونت اختیار کریگا،  قَدَمِیْ ھٰذِہٖ عَلٰی رَقَبَۃِ کُلِّ وَلِیِّ اللہِ (یعنی میرایہ قدم ہرولی کی گردن پرہے) کا اعلان فرمائے گا اور زمانہ کے تمام اولیاء کرام رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہم اجمعین اس کے فرمانبردارہوں گے۔” (بہجۃالاسرار،ذکراخبارالمشایخ عنہ بذالک،ص۱۴)

 حضرت سیدناشیخ عبدالقادر جیلانی،غوث صمدانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ  کی وقت ولادت کرامت کاظہور:

    آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کی ولادت ماہ رمضان المبارک میں ہوئی اور پہلے دن ہی سے روزہ رکھا۔ سحری سے لے کر افطاری تک آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ اپنی والدہ محترمہ کا دودھ نہ پیتے تھے،چنانچہ سیدنا غوث الثقلین شیخ عبدالقادر جیلانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کی والدہ ماجدہ فرماتی ہیں کہ” جب میرا فرزند ارجمند عبدالقادر پیدا ہوا تو رمضان شریف میں دن بھر دودھ نہ پیتا تھا۔”(بہجۃالاسرارومعدن الانوار،ذکر نسبہ وصفتہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ،ص۱۷۲)
غوث اعظم متقی ہرآن میں
چھوڑاماں کادودھ بھی رمضان میں

حضرت سیدناشیخ عبدالقادر جیلانی،غوث صمدانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ  کے  بچپن کی برکتیں:

     آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کی والدہ ماجدہ حضرت سیدتنا ام الخیر فاطمہ بنت عبداللہ صومعی
رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہما فرمایا کرتی تھیں:” جب میں نے اپنے صاحبزادے عبدالقادر کو جنا تو وہ رمضان المبارک میں دن کے وقت میرا دودھ نہیں پیتا تھااگلے سال رمضان کا چاند غبار کی وجہ سے نظر نہ آیا تو لوگ میرے پاس دریافت کرنے کے لئے آئے تو میں نے کہا کہ” میرے بچے نے دودھ نہیں پیا۔”پھر معلوم ہوا کہ آج رمضان کا دن ہے اور ہمارے شہر میں یہ بات مشہور ہوگئی کہ سیّدوں میں ایک بچہ پیدا ہوا ہے جو رمضان المبارک میں دن کے وقت دودھ نہیں پیتا۔”
(بہجۃالاسرار،ذکرنسبہ وصفتہ رحمۃاللہ تعالیٰ علیہ،ص۱۷۲)

حضرت سیدناشیخ عبدالقادر جیلانی،غوث صمدانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کا حلیہ مبارک:

    حضرت شیخ ابو محمد عبداللہ بن احمد بن قدامہ مقدسی فرماتے ہیں کہ ہمارے امام شیخ الاسلام محی الدین سید عبدالقادر جیلانی،قطب ربانی،غوث صمدانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ ضعیف البدن،میانہ قد،فراخ سینہ،چوڑی داڑھی اوردرازگردن،رنگ گندمی،ملے ہوئے ابرو، سیاہ آنکھیں،بلند آواز،اوروافر علم و فضل تھے۔ 
(بہجۃالاسرار،ذکرنسبہ وصفتہ رحمۃاللہ تعالیٰ علیہ،ص۱۷۴)

حضرت سیدناشیخ عبدالقادر جیلانی،غوث صمدانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ  کی زیارت کی برکتیں:

    شیخ ابو عبداللہ محمد بن علی سنجاری رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کے  والدفرماتے ہیں کہ ”حضرت سیدناشیخ عبدالقادر جیلانی،غوث صمدانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ دنیا کے سرداروں میں سے منفرد ہیں،اولیاء اللہ میں سے ایک فرد ہیں،اللہ عزوجل کی طرف سے مخلوق کے لئے ہدیہ ہیں، وہ شخص نہایت نیک بخت ہے جس نے آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کو دیکھا، وہ شخص ہمیشہ شاد رہے جس نے آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کی صحبت اختیار کی، وہ شخص ہمیشہ خوش رہے جس نے
حضرت سیدناشیخ عبدالقادر رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کے  دل میں رات بسرکی ۔”
(بہجۃالاسرار،ذکراحترام المشایخ والعلماء لہ وثنا ئہم علیہ،ص۴۳۲)
Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: Content is protected !!