Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

وہ زمیں اچھی لگی وہ آسماں اچھا لگا

وہ زمیں اچھی لگی وہ آسماں اچھا لگا
ہر مدینے جانے والا کارواں اچھا لگا
مکہ سے ہوکر مدینے کی طرف جانے لگا
اونٹ پر بیٹھا ہوا ہر ساباں اچھا لگا
مسجدنبوی پہ جا کر ٹک گئی  میری نظر
گنبد خضریٰ کا حسنِ جاوداں اچھا لگا
سبز گنبد کے مکیں پر جان و دل قربان ہیں
آپ کا فرمان عالی بے گماں اچھا لگا
فداؔ اس دنیا میں کتنے ہی نشاںاچھے لگے
ہم کو آقا کے کفِ پا کا نشاں اچھا لگا
error: Content is protected !!