عورت نے صحیح کہا

عورت نے صحیح کہا

Advertisement

حضرتِ سیدنا عبدُاللّٰہ بن مُصْعَب رضی اللّٰہ تعالٰی عنہ فرماتے ہیں کہ ایک بار امیر المؤمنین حضرتِ سیدنا عمرِ فاروق رضی اللّٰہ تعالٰی عنہ نے اِرشاد فرمایا : لَا تَزِیْدُوْا فِیْ مُہُوْرِ النِّسَاءِ عَلٰی اَرْبَعِیْنَ اُوْقِیَۃً، فَمَنْ زَادَ اَلْقَیْتُ الزِّیَادَۃَ فِیْ بَیْتِ الْمَالِیعنی : عورتوں کا حق مہر چالیس اُوقیہسے زیادہ نہ کرو ، جو زیادہ ہوگا میں اسے بیت المال میں ڈال دوں گا ۔ایک عورت بولی : یا امیر المؤمنین !یہ آپ کیا فرما رہے ہیں حالانکہ قرآنِ پاک میں تواللّٰہ عَزَّوَجَلَّ یوں ارشاد فرماتا ہے :
وَ اِنْ اَرَدْتُّمُ اسْتِبْدَالَ زَوْجٍ مَّكَانَ زَوْجٍۙ-وَّ اٰتَیْتُمْ اِحْدٰىهُنَّ قِنْطَارًا فَلَا تَاْخُذُوْا مِنْهُ شَیْــٴًـا ؕ (پ۴، النساء:۲۰)
ترجمہ کنزالایمان : اور اگر تم ایک بی بی کے بدلے دوسری بدلنا چاہواور اُسے ڈھیروں مال دے چکے ہوتو اس میں سے کچھ واپس نہ لو۔
یہ سن کر آپ رضی اللّٰہ تعالٰی عنہ نے اِرشاد فرمایا : ’’اِمْرَاَۃٌ اَصَابَتْ وَرَجُلٌ اَخْطَاَ یعنی : عورت نے صحیح کہا اور مرد نے خطاکی ۔‘‘(کنزالعمال، کتاب النکاح ، ۸/ ۲۲۶حدیث:۴۵۷۹۲، الجزء، ۱۶)

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: Content is protected !!