Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

انسان کی تیس غلطیاں

(۱)اس خیال میں ہمیشہ مگن رہنا کہ جوانی اور تندرستی ہمیشہ رہے گی
(۲)مصیبتوں میں بے صبر بن کر چیخ پکار کرنا 
(۳)اپنی عقل کو سب سے بڑھ کر سمجھنا 
(۴)دشمن کو حقیر سمجھنا 
(۵)بیماری کو معمولی سمجھ کر شروع میں علاج نہ کرنا
(۶) اپنی رائے پر عمل کرنا اور دوسروں کے مشوروں کو ٹھکرا دینا 
(۷)کسی بدکار کو باربار آزماکر بھی اس کی چاپلوسی میں آجانا 
(۸)بیکاری میں خوش رہنا اور روزی کی تلاش نہ کرنا
(۹)اپنا راز کسی دوسرے کو بتا کر اسے پوشیدہ رکھنے کی تاکید کرنا
(۱۰)آمدنی سے زیادہ خرچ کرنا 
(۱۱)لوگوں کی تکلیف میں شریک نہ ہونا اور ان سے امداد کی امید رکھنا 
(۱۲)ایک دو ہی ملاقات میں کسی شخص کی نسبت کوئی اچھی یا بری رائے قائم کرلینا (۱۳)والدین کی خدمت نہ کرنا اور اولاد سے خدمت کی امید رکھنا 
(۱۴)کسی کام کو اس خیال سے ادھورا چھوڑ دینا کہ پھر کسی وقت مکمل کرلیا جائے گا
(۱۵)ہرشخص سے بدی کرنا اور لوگوں سے اپنے لیے نیکی کی توقع رکھنا 
(۱۶)گمراہوں کی صحبت میں اٹھنا بیٹھنا 
(۱۷)کوئی عمل صالح کی تلقین کرے تو اس پر دھیان نہ دینا 
(۱۸)خود حرام و حلال کا خیال نہ کرنا اور دوسروں کو بھی اس راہ پر لگانا 
(۱۹)جھوٹی قسم کھا کر جھوٹ بول کر دھوکا دے کر اپنی تجارت کو فروغ دینا 
(۲۰)علم دین اور دینداری کو عزت نہ سمجھنا 
(۲۱)خود کو دوسروں سے بہتر سمجھنا 
(۲۲)فقیروں اور سائلوں کو اپنے دروازہ سے دھکا دے کر بھگا دینا 
(۲۳)ضرورت سے زیادہ بات چیت کرنا 
(۲۴)اپنے پڑوسیوں سے بگاڑ رکھنا 
(۲۵)بادشاہوں اور امیروں کی دوستی پر اعتبار کرنا
(۲۶)خواہ مخواہ کسی کے گھریلو معاملات میں دخل دینا 
(۲۷)بغیر سوچے سمجھے بات کرنا 
(۲۸)تین دن سے زیادہ کسی کا مہمان بننا 
(۲۹)اپنے گھر کا بھید دوسروں پر ظاہر کرنا 
(۳۰)ہر شخص کے سامنے اپنے دکھ درد بیان کرنا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: Content is protected !!