مسجد نبوی میں چراغ کی ابتداء

مسجد نبوی میں چراغ کی ابتداء

Advertisement

مسجد نبوی عَلٰی صَاحِبِہَا الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام اور حجرات میں راتوں کو چراغ نہیں (1) جلتے تھے۔ (2) حضرت تمیم داری کے غلام سراج کا بیان ہے کہ رسول اللّٰہ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کی مسجد میں کھجور کی ٹہنیوں اور پتو ں سے روشنی کی جاتی تھی۔ ہم قَنادِیل (3) وروغن زیتون اور رسیاں لائے اور میں نے (قندیلوں کو لٹکا کر) مسجد میں روشنی کی۔ رسول اللّٰہ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم نے یہ دیکھ کر پو چھاکہ ہماری مسجد کو کس نے روشن کیا ہے؟ تمیم نے کہا: میرے اس غلام نے۔ آپ نے پوچھا: اس کا کیا نام ہے؟ تمیم نے کہا: فتح۔ پیغمبر خدا صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم نے فرمایا: بلکہ اس کا نام سراج ہے۔ پس رسول اللّٰہ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم نے میرانام سر اج (4) رکھا۔ (5)

Advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: Content is protected !!