حضرت کبشہ انصاریہ رضی ﷲ تعالیٰ عنہا

  یہ قبیلہ انصار کی بہت ہی جاں نثار صحابیہ ہیں ایک مرتبہ رسول اﷲصلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہٖ وسلّم نے ان کی مشک کے منہ سے اپنا منہ لگا کر پانی نوش فرمالیا تو حضرت کبشہ رضی اﷲ تعالیٰ عنہا نے اس مشک کا منہ کاٹ کر تبرکاً اپنے پاس رکھ لیا
  (الاستیعاب ،باب النساء،باب الکاف ۳۵۱۱،کبشۃ الأنصاریۃ،ج۴،ص۴۶۰)
تبصرہ:۔اس سے پتا چلتا ہے کہ حضرات صحابہ و صحابیات رضی اﷲ تعالیٰ عنہم کو حضورصلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہٖ وسلّم سے کتنی والہانہ اور عاشقانہ محبت تھی کہ جس چیز کو بھی حضورصلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہٖ وسلّم سے تعلق ہوجاتا تھا وہ چیز ان کی نظروں میں باعث تعظیم اور لائق احترام ہو جایا کرتی تھی کیوں نہ ہوکہ یہی ایمان کی نشانی ہے کہ مسلمان نہ صرف حضورصلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہٖ وسلّم کی ذات سے محبت کرے بلکہ حضور کی ہر ہر چیز سے بھی محبت کرے اور حضورصلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہٖ وسلّم کی ہر چیز کو اپنے لئے قابل تعظیم جانے اور اس کا ایمانی محبت کے ساتھ اعزاز واکرام کرے۔