حضرت اسماء بنت عُمَیْس رضی ﷲ تعالیٰ عنہا

یہ بھی صحابیہ اور رسول اﷲصلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہٖ وسلّم پر جان چھڑ کنے والی عورت ہیں مکہ میں جب کافروں نے مسلمانوں کو بے حد ستانا شروع کیا تو رسول اﷲصلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہٖ وسلّم نے حبشہ کی طرف ہجرت کا حکم دیا چنانچہ جب لوگوں نے حبشہ کی طرف ہجرت کی تو اسماء بنت عمیس رضی اﷲ تعالیٰ عنہا نے بھی اپنے شوہر جعفر بن ابی طالب رضی اﷲ تعالیٰ عنہ کے ساتھ حبشہ کا سفر کیا اور جب رسول اﷲصلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہٖ وسلّم نے مدینہ منورہ کی طرف ہجرت فرمائی تو حبشہ کے مہاجرین حبشہ سے مدینہ منورہ چلے آئے جب بی بی اسماء بنت عمیس رضی اﷲ تعالیٰ عنہا بارگاہ رسالت صلي اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہٖ وسلّم میں حاضر ہوئیں تو حضورصلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہٖ وسلّم نے ان کو صاحب الہجرتین (دو ہجرت والی) کے لقب سے سرفراز فرمایا اور اجر عظیم کی بشارت دی ۔
(الاستیعاب ،باب النساء،باب الالف۳۲۶۴،أسماء بنت عمیس،ج۴،ص۳۴۷)